2 lines of sad poetry in Urdu with images or without images


  • 2 line Urdu poetry copy-paste
  • poetry in Urdu 2 lines attitude
  • sad poetry SMS in Urdu 2 lines text messages
  • 2 line poetry in English
  • heart touching poetry in Urdu 2 lines SMS
  • 2 line Urdu poetry romantic
  • 2 line poetry in Urdu font attitude
  • sad poetry in Urdu 2 lines without images




اســـں نـــے وعـــدہ کــیا ہـــے آنـــے کا 

رنگ دیکھـــو میـــرے غـــریب خـــانـــے کا



ﯾﺎﺩ ﺗﻮ ﮨﻮﮞ ﮔﯽ ﻭﮦ ﺑﺎﺗﯿﮟ ﺗﺠﮭﮯ ﺍﺏ ﺑﮭﯽ ﻟﯿﮑﻦ

ﺷﯿﻠﻒ ﻣﯿﮟ ﺭﮐﮭﯽ ﮨﻮﺋﯽ ﺑﻨﺪ ﮐﺘﺎﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ

پروین شاکر




full ghazal of that poetry parveen shakir 

ﮔﺌﮯ ﻣﻮﺳﻢ ﻣﯿﮟ ﺟﻮ ﮐﮭﻠﺘﮯ ﺗﮭﮯ ﮔﻼﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ

ﺩﻝ ﭘﮧ ﺍﺗﺮﯾﮟ ﮔﮯ ﻭﮨﯽ ﺧﻮﺍﺏ ﻋﺬﺍﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ

ﺭﺍﮐﮫ ﮐﮯ ﮈﮬﯿﺮ ﭘﮧ ﺍﺏ ﺭﺍﺕ ﺑﺴﺮ ﮐﺮﻧﯽ ﮨﮯ

ﺟﻞ ﭼﮑﮯ ﮨﯿﮟ ﻣﺮﮮ ﺧﯿﻤﮯ ﻣﺮﮮ ﺧﻮﺍﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ

ﺳﺎﻋﺖ ﺩﯾﺪ ﮐﮧ ﻋﺎﺭﺽ ﮨﯿﮟ ﮔﻼﺑﯽ ﺍﺏ ﺗﮏ

ﺍﻭﻟﯿﮟ ﻟﻤﺤﻮﮞ ﮐﮯ ﮔﻠﻨﺎﺭ ﺣﺠﺎﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ

ﻭﮦ ﺳﻤﻨﺪﺭ ﮨﮯ ﺗﻮ ﭘﮭﺮ ﺭﻭﺡ ﮐﻮ ﺷﺎﺩﺍﺏ ﮐﺮﮮ

ﺗﺸﻨﮕﯽ ﮐﯿﻮﮞ ﻣﺠﮭﮯ ﺩﯾﺘﺎ ﮨﮯ ﺳﺮﺍﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ

ﻏﯿﺮ ﻣﻤﮑﻦ ﮨﮯ ﺗﺮﮮ ﮔﮭﺮ ﮐﮯ ﮔﻼﺑﻮﮞ ﮐﺎ ﺷﻤﺎﺭ

ﻣﯿﺮﮮ ﺭﺳﺘﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﺯﺧﻤﻮﮞ ﮐﮯ ﺣﺴﺎﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ

*ﯾﺎﺩ ﺗﻮ ﮨﻮﮞ ﮔﯽ ﻭﮦ ﺑﺎﺗﯿﮟ ﺗﺠﮭﮯ ﺍﺏ ﺑﮭﯽ ﻟﯿﮑﻦ*

*ﺷﯿﻠﻒ ﻣﯿﮟ ﺭﮐﮭﯽ ﮨﻮﺋﯽ ﺑﻨﺪ ﮐﺘﺎﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ*

ﮐﻮﻥ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﮧ ﻧﺌﮯ ﺳﺎﻝ ﻣﯿﮟ ﺗﻮ ﮐﺲ ﮐﻮ ﭘﮍﮬﮯ

ﺗﯿﺮﺍ ﻣﻌﯿﺎﺭ ﺑﺪﻟﺘﺎ ﮨﮯ ﻧﺼﺎﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ

ﺷﻮﺥ ﮨﻮ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ ﺍﺏ ﺑﮭﯽ ﺗﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﮐﯽ ﭼﻤﮏ

ﮔﺎﮨﮯ ﮔﺎﮨﮯ ﺗﺮﮮ ﺩﻟﭽﺴﭗ ﺟﻮﺍﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ

ﮨﺠﺮ ﮐﯽ ﺷﺐ ﻣﺮﯼ ﺗﻨﮩﺎﺋﯽ ﭘﮧ ﺩﺳﺘﮏ ﺩﮮ ﮔﯽ

ﺗﯿﺮﯼ ﺧﻮشبو ﻣﺮﮮ ﮐﮭﻮﺋﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﺧﻮﺍﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ



اُسے کسی نے کبھی بولتے نہیں دیکھا ۔۔۔

جو شخص چُپ نہیں رہتا مری حمایت میں ۔۔۔۔



چلو پھر کاغذوں پر داستان درد لکھتے ہیں 

‏زمانہ منتظر ہوگا غموں پر مسکرانے کا



جو زُلف مُنتشر ہُوئی، زنجیر بَن گئی

جو حَرف مُختصر ہُوا، افسانہ بَن گیا

عبدالحمید عدم




‏ہم نے کاٹا ھے ہجر کی مُسافتوں کا سفر

ہمیں معلوم ہے پرندوں کا بچھڑنا کیا ھے۔





میرے حصے وہ زندگی آئی🔥

جس کو جیتے ہوئے بھی ڈرتا ہوں🥀

.


نہ پکاریں گے تمہیں ہم سے یہ وعدہ لے لو

شرط یہ ہے کہ کبھی یاد نہ آنا تم بھی



نہ پکاریں گے تمہیں ہم سے یہ وعدہ لے لو

شرط یہ ہے کہ کبھی یاد نہ آنا تم بھی 




یوں بھی ہو سکتا ہے یک دم کوئی اچھا لگ جائے

بات کچھ بھی نہ ہو اور دل میں تماشا لگ جائے



‏نِگاہِ لُطف کی تسکِیں کا شُکریہ لیکن 

متاعِ درد کو کِس دِل سے ہم جُدا کرتے

عرشؔی بَھوپالی



‏یہ مخمور آنکھیں جو بدلی ہوئی ہیں

کبھی ہم نے ان کے تھے صدقے اتارے۔۔



‏ﺗﻮ ﺍﮔﺮ ﺳﻦ ﻧﮩﯿﮟ ﭘﺎﯾﺎ ﺗﻮ ﻣﺠﮭﮯ ﻏﻮﺭ ﺳﮯ ﺩیکھ.

ﺑﺎﺕ ﺍﯾﺴﯽ  ﮨﮯ. ﮐﮧ  ﺩﮨﺮﺍﺋﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎ ﺳﮑﺘﯽ.



‏اس ایک خوف نے اٹھنے نا دیا محفل سے

بچے گا کچھ نہیں اس نے اگر نہیں روکا۔



آیا تھا ایک شخص میرے درد بانٹنے

 رخصت ہوا تو اپنا بھی غم مجھے دے گیا



‏تُمہارا قرب میسر جہاں بھی ہوگا مجھے

تمام زیست میں وہ وقت مُعتبر ہو گا۔۔!!




وسعتِ عشق میں_______ تنگ دلی کا یہ عالم !

اک چاہنا،فقط اسی کو چاہنا __پھر کچھ نہ چاہنا



سنبھل کے چلنا یہ شہر عقابوں کا ہے 💞

لوگ سینے سےلگا کر کلیجہ نکال لیتے ہیں💕




‏‎کی مرے قتل کے بعد اس نے جفا سے توبہ

ہائے اس زود پشیماں کا پشیماں ہونا

(غالب)




اِن بہاروں کی آبرو رَکھ لو

مُسکراؤ , کہ پُھول کِھل جائیں



پھر یوں ہوا کہ حسرتیں پیروں میں گر پڑیں

پھر میں نے اُن کو روند کے قصہ مُکا دیا




 ﺳﻮﮒ ﻣﻨﺎؤ ﮐﮧ اب ﮨﻢ ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮨﮯ

ﻣﺮ ﮔﺌﮯ ﮨﻢ ﺗﯿﺮﮮ ﻣﻌﯿﺎﺭ ﺗﮏ ﺁﺗﮯ ﺁﺗﮯ💔😢



ﺳﻨﯽ ﺳﻨﺎﺋﯽ ﭘﺮ ﯾﻘﯿﻦ ﮐﺮﻧﮯ ﺳﮯ ﺑﮩﺘﺮ ﺗﮭﺎ

ﺗﻮ ﺩﯾﮑﮫ ﻟﯿﺘﺎ ﻣﺠﮫ ﺳﮯ ﮔﻔﺘﮕﻮ ﮐﺮ ﮐﮯ


بات کرنی مجھے مشکل کبھی ایسی تو نہ تھی

  

جیسی اب ہے تری محفل کبھی ایسی تو نہ تھی



پڑھنے والا بھی تو کرتا ہے کسی سے منسوب

سبھی کردار کہانی کے نھیں ہوتے ہیں



خِلافِ ذَوق سَہی پَر یُوں شِعر لکھنے سِے

ذرا سَــا تُــجھ سُے تَــعلق بَــحال رہــتا ہِے



جھوٹا هے ، جانتا هوں مگر اِس کے باوجود

رونق لگائے رکھتا هے ، اک خواب کا وجود




کوئی صورت بھی اگر تم سے حسیں ہوتی ہے 

پھر دوبارہ وہ نگاہوں میں نہیں ہوتی ہے


‏کبھی کبھی تو وہ اتنی رسائی دیتا ہے 

وہ سوچتا ہے تو مجھ کو سنائی دیتا ہے

شہزاد واثق



ضبط کیجئے تو دل ہے انگارہ

اور اگر روئیے تو پانی ہے




اُس نے جب پھول کو چُھوا ہو گا

ہوش خوشبو کے اُڑ گئے ہوں گے



وہ جو دُور رہ کر حرارتِ جاں بنا ہُوا ھے 

وہ شخص میرے قریب ہوگا تو کیا بنے گا 




علاقہ غیر کو سیراب کر رہی تھی وہ نہر 

رسیلے ہونٹ کہیں اور خشک ہو رہے تھے 

احسان فارس





تیری آواز ۔۔۔۔۔میرا رزق۔۔۔۔ ہوا کرتی تھی 

تو مجھے۔۔ بھوک سے مارے گا ۔۔۔ سوچا نہ تھا



وہ جا چُکی  __، مگر اب تک برستا رھتا ھے

اُسی کا عکسِ شفق رنگ ، میری شاموں پر



پوچھ بیٹھے ہیں ہمارا حال وہ

بے خودی تو ہی بتا کیا کیجے

  


آپ حریم ناز میں شوق سے آئیں بے حجاب

اب وہ جنوں جنوں نہیں، اب وہ نظر نظر نہیں

(جون ایلیا)



حُصولِ دید سے مشروط کب ہے جزبہءِ دل

مجھے تو پیار تیرے نام پر بھی آتا ہے.

میں پیار کی حد سے گزر گیا شاید.

تو سامنے بھی نہیں اور نظر بھی آتا ہے


سنا ہے آنکھ میں اشکوں کا قافلہ لے کر

کسی  نے بعد میں ہم کو  بڑا  تلاش کیا



حصول دید سے مشروط کب ہے جذبۂ دل

ہمیں تو پیار تیرے نام پہ بھی آتا ہے




زلف سلجھائیے صبح ہونے کو ہے

وصل میں رات بھر جو ہوا سو ہوا



وحشتیں ، کچھ اِس طرح اپنا مقدر ہو گئیں 

ہم جہاں پہنچے، ہمارے ساتھ ویرانے گئے



جب وقت کی مرجھائی ہوئی شاخ سنبھالو

اُس شاخ سے ٹوٹا ہوا لمحہ __ مجھے دینا

اِک درد کا میلہ کہ لگا ہے دل و جاں میں

اِک روح کی آواز کہ ___ ‘رستہ مجھے دینا’

محسن نقوی



Aaj ki shab visaal ki shab hai

Dil se har roz dastaa hai wahi






کبھی یہ لگتا ہے __ اب ختم ہو گیا سب کچھ 

کبھی یہ لگتا ہے اب تک تو کچھ ہوا بھی نہیں 

کبھی تو بات کی اس نے، کبھی رہا خاموش 

کبھی تو ہنس کے ملا اور کبھی ملا بھی نہیں 

کبھی جو تلخ کلامی تھی ___ وہ بھی ختم ہوئی 

کبھی گلہ تھا ہمیں ان سے، اب گلہ بھی نہیں 

      جاوید اختر





کل دیکھ لیا #شہر میں اسے ہستا بستا

وہ تو کہتا تھا بچھڑے گا تو مر جائے گا



کل دیکھ لیا #شہر میں اسے ہستا بستا

وہ تو کہتا تھا بچھڑے گا تو مر جائے گا


 


میں اس کو بتاتا ہوں پریشانیاں دل کی

وہ ماتھا چوم کر کہتی ہے خدا خیر کرے گا




اب تو آتا ہے یہی جی میں کہ اے محوِ جفا

کُچھ بھی ہو جائے، مگر تیری تمنّا نہ کریں



ہم خرابوں سے بے خبر رہیے،

پارسا ہیں تو  اپنے گھر رہیے



آ پھر سے روبرو کہ آئے مجھے قرار

اب کے اداس یوں ہوں کہ جینا محال ہے





میــں نـے پــرکـھا ہــے اپنـــی ســیاہ بخــتی کــو! 

میـں جـــسے اپنــا کـــہہ دوں پھــر وہ مــیرا نہــیں رہـــتا!



میــں نـے پــرکـھا ہــے اپنـــی ســیاہ بخــتی کــو! 

میـں جـــسے اپنــا کـــہہ دوں پھــر وہ مــیرا نہــیں رہـــتا!



کتابوں سے حوالے دوں یا تجھ کو سامنے رکھ دوں 

لوگ مجھ سے پوچھ بیٹھے ہیں محبت کس کو کہتے ہی



پہلے خوشبوکے مزاجوں کو سمجھ لو لوگو🥀

پھر گلستان میں کسی گل سے محبت کرنا ❤

    


‏امجد کتابِ جاں کو ، وہ پڑھتا بھی کس طرح

لکھنے تھے جتنے لفظ ، ابھی حافظے میں تھے 

"امجد اسلام امجد"



عـشــــق میں وفــــــا وضــــــو کی مانند ہے❤

بـــے وضـــــو نـــــماز کبھی ادا نہیــــں ہوتی..♥♥..



ذِ کر شبِ فراق سے وحشت اُسے بھی تھی 

میری طرح کسی سے محبت اسے بھی تھی 



ہم تو اِک دشمنِ جاں کو نہیں بھولے اب تک

کس طرح ہوتے ہیں احباب سے احباب جدا



چند لوگوں کی محبت بھی

غنیمت ہے 

شہر کا شہر 

ہمارا تو نہیں ہو سکتا



بُجھ نہ جائے اے عدمؔ ، آج شمعِ زندگی

شب بہت طویل ہے جی بہت نڈھال ہے



عمروں نے کی ہے کیلنڈروں سے چھیڑ کھانی

وہ کھیلنے والا اتوار اب فکروں میں گزر جاتا ہے



وقت رخصت ہوا تو آنکھ ملا کر نہیں گیا

وہ کیوں گیا ہے، یہ بھی بتا کر نہیں گیا



داد ملتی ہے درد سنا ک

 عجیب چیز ہے شاعری بھی




سب کلائی کی بات ہے 

چوڑیاں کب حسین ہوتی ہیں



‏۔فتنہ پرداز ، دغا باز ، فسُوں گر ، عیار

ہائے افسوس دل آیا بھی تو آیا کس پر



‏میرے لب اس کے تقدس میں ہلتے ہی نہیں

اُسے کہومیری آنکھوں میں "اظہار محبت" دیکھے



آپ برہم ہی سہی, بات تو کر لیں ہم سے

‏کُچھ نہ کہنے سے مُحبت کا گُماں ہوتا ہے



دیکھ ساقی.... کیسے بستا ھے عشق وجود میں

سلطنت میری ھے رگ رگ پہ حکومت یار کی

  


خود بخود راز محبت منکشف کرتا رہا

وہ گلابی رنگ جو رقصاں تیرے گالوں پہ تھا


میرے بعد تیرے عشق میں نئے لوگ 

بدن تو چومیں گے زلفیں نہیں سنواریں گے


‏آئینوں سے ڈر جائیں........گے  لوگ یہاں...

کبھی کردار نظر آیا جو چہرے کی جگہ...



نہ عیاں ہوئ تم سے نہ بیاں ہوئ ہم سے۔۔۔

بس سلجھی ہوئ آنکھوں میں الجھی رہی محبت


شام ہوتے ہی تیری یادوں کی پاگل خوشبو ۔

نیند آنکھوں سے سکون دل سے چرا لیتی ہیں ۔



‏میری آنکھوں میں بھر گئی ہے وہی

ھاں وہی، جس سے جی نہیں بھرتا


‏ﺗﻮ ﺍﮔﺮ ﺳﻦ ﻧﮩﯿﮟ ﭘﺎﯾﺎ ﺗﻮ ﻣﺠﮭﮯ ﻏﻮﺭ ﺳﮯ ﺩیکھ.

ﺑﺎﺕ ﺍﯾﺴﯽ  ﮨﮯ. ﮐﮧ  ﺩﮨﺮﺍﺋﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎ ﺳﮑﺘﯽ.



❤مانا کہ تیرے حسن کے چرچے بهی بہت ہیں ❤

مگر ہم بهی وہ پهول ہیں جو ہر باغ میں نہیں ملتے




کوئی روح کا طلبگار ملے----تو ہم بھی کریں دوستی 

ورنہ دل تو بہت ملتے ہیں---کوئی دل سے نھیں ملتا 💞




لگتـــــــا ہے ابھی دل نے تعلـــــــق نہیـــــــں توڑا

‏یہ آنکھ تیـــــــرے نام پہ بھـــــــر آتی ہے  اب بھی



کچھ دل  کی مجبوریاں تھیں کچھ قسمت کے مارے تھے...💔💔

ساتھ وہ بھی چھوڑ  گئے  جو  جان  سے  پیارے تھے...💔💔



ہمارے پیروں میں بیڑیاں ہیں ملازمت کی

ہمارے وعدے ہماری چھٹی سے منسلک ہیں



میرے بعد یہ رنگینیاں نہیں ہوں گی

میرے بعد تجھے دنیا سیاہ لگے گی_



‏وہ کبھی ڈرا ہی نہیں مُجھے کھونے سے

وہ کیا افسوس کریگا، میرے نہ ہونے سے...!!



یہ محبت کے حادثے اکثر_______ دلوں کو توڑ دیتے ہیں🍂

تم منزل کی بات کرتے ہو لوگ راہوں میں چھوڑ دیتے ہیں🍂


بساطِ دل پہ عجب ہے شکستِ ذات کا لطف

جہاں پہ جیت اٹل ہو وہ بازی ہار کے دیکھو



‏آنكھوں ميں ميرى ٹھہرو يا دل ميں اتر جاؤ

گھر دونوں تمہارے ہيں تم چاہے جدھر جاؤ



کسی کو گھر سے نکلتے ہی مل گی منزل 

کوئی ہماری طرح ساری عمر سفر میں رہا



وہ  اتفاق سے  مِل  جائے  راستے میں کہیں

مجھے یہ شوق مسلسل سفر میں رکھتا ہے

  


انداز  ہی تو بدلے ہیں الفاظ تو نہیں 

نام بھی وہی ہے اور  پہچان بھی وہی



پھر شادماں ہوئے ہیں خرابے حیات کے 

ساغرؔ کسی کے گیسوئے خم دار ہنس پڑے​

ساغر صدیقی


میں کہ رہتا ہوں بصد ناز گریزاں تجھ سے

‏تو نہ ہو گا تو بہت یاد کروں گا تجھ کو_



کبھی لفظوں میں تلاش نہ کــــــرنا وجود میرا

میں اتنا لکھ نہیں پاتا جتنا محسوس کرتا ہوں


اس کو بھی اپنے حسن پہ اب ناز ہو گیا

ٹھہرے ہوئے ہیں میرے بھی جذبات ان دنوں



ایسا گم ہوں میں اپنی دنیا میں 

خود سے ملنا محال ہے میرا ! 💔



"میرے تلخ لہجــے کو تکبـــر جان کر"🙂

"میرے اپنے میرے درد سے لا علم ہیــــں"✨



میری حسرت نہ سہی دل سے نکلنے والی

آپ کے ناز تو ہیں، دل  میں  سمــانے  والے









تم مجھے روز نئے طور سے چاہا کرنا

ہاں مجھے پیار سے بیزار نا ہونے دینا



وہ رنج ، وہ غم ، بے اختیار ایسا تھا!!!

کہ عمر بھر اسے روئیں وہ یار ایسا تھا!!!




میری حسرت نہ سہی دل سے نکلنے والی

آپ کے ناز تو ہیں، دل  میں  سمــانے  والے



آستینوں میں چھپا لیتی ھے خنجر دنیا

ھمیں ایک چہرے کا تاثر نہ چھپانا آیا



‏ﺯﺭﺍ ﺳﯽ ﺑﺎﺕ ﻫﻮﺗﯽ ﻫﮯ...ﺗﻮ تنہا ﭼﮭﻮﮌ ﺟﺎﺗﮯ ﻫﯿﮟ..!!💔

ﻣﺤﺒﺖ ﮐﺮ ﮐﮯ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﺳﮯ....ﺳﻨﺒﮭﺎﻟﯽ ﮐﯿﻮﮞ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎﺗﯽ..!!💔



دیتے ہیں داد لوگ تعلق کو دیکھ کر 

دیکھے ہے کون شعـر کا معیار آجکل



💔💔💔💔💔

اسے کہنا کہ صدا موسم بہاروں کے نہیں رہتے۔۔۔۔!!!!

سبز پتے بھی گرتے ہیں جب ہوائیں رخ بدلتی ہیں



تم جلتے ہی رہو گے ہماری ہنسی دیکھ کر😊

اور ہم مسکراتے رہیں گے تم کو جلانے کے لیئے



تُم جو اوروں کو بتاتے ہو جینے کا طریقہ ،!!

خود اپنی مٹھی میں میری جان لئے بیٹھے ہو



تحریروں کے ہنر سے واقف بھی ہوں ...

مگر شوق ہے کہ آنکھیں پڑھے کوئی ...




آشنا سے چہروں کے اجنبی رویوں کو

سہہ کے مسکرا دینا آفریں اذیت ھے



عشق والوں کی آنکھیں کرتی ھیں آنکھوں سے کلام

دل سنتا ھے دل کی.... اور دھڑکنیں کرتی ھیں سلام ❤



ایک ناکام محبت ھی ، ھمیں کافی ھے،،،،

ھم دوبارہ بھی اگر کرتے،تو خسارہ ھوتا...

جون ایلیاء




وہ غزل کے ساتھ لگاتی ہے، اپنی تصویریں!!

میں شعر پڑھنے سے پہلے ہی۔۔داد دیتا ہوں!




*تم چن سکتے ھو ہمسفر نیا*

*میرا تو عشق ھے مجھے اجازت نہیں*💔🥀


‏ہر شوق کو زوال ہے

شوقِ دیدار کے سوا ۔۔۔!!



شروع میں تو تھی دریائے نیل سے بھی گہری_____!

انجام کو پہنچی تو صحرا ہوئی محبت ________



نئے کردار میں ڈھلتے ہوئے بھی با حیا رہنا

زرا سی دیر لگتی ہے یہاں بے کار ہونے میں



نئے کردار میں ڈھلتے ہوئے بھی با حیا رہنا

زرا سی دیر لگتی ہے یہاں بے کار ہونے میں


اُسے کسی نے کبھی بولتے نہیں دیکھا ۔۔۔

جو شخص چُپ نہیں رہتا مری حمایت میں ۔۔۔۔



‏تو نے دیکھا ہی نہیں شہر میں پھیلی تھی وبا

مرنے والوں میں ترے حسن کے بیمار بھی تھے



تیری سادگی تیری عاجزی تیری هر ادا کمال هے❤

مجهے فخر هے مجهے ناز هے میرا یار بے مثال هے 🖤



چلو پھر کاغذوں پر داستان درد لکھتے ہیں 

‏زمانہ منتظر ہوگا غموں پر مسکرانے کا


 


‏ہم نے کاٹا ھے ہجر کی مُسافتوں کا سفر

ہمیں معلوم ہے پرندوں کا بچھڑنا کیا ھے۔




خوبصورت ہے چاند بھی مگر

 وہ زمین زادی معیار الگ رکھتی ہے



سوچتا ہوں بنا ہی ڈالوں

کوئی فرقہ اداس لوگوں کا❤




بڑی حسرت لے کر آئے تھے ہم ان کے دیدار کی

چھلک پڑے آ نسوں بیوفائی دیکھ کر اپنے یار کی



‏اس شہرِ بے مثال میں بس مُجھ کو چھوڑ کر..💔

ہر شخص لاجواب ہے ، ہر شخص ہے  باکمال..💔



خامیاں سب میں ہوتی ہے

مگر نظر دوسرں میں نظر آتی ہیں



مصروفیات سے وابسطہ ھے یہ ذندگی میری

خدا گواہ ھے ہم پھر بھی تمیں یاد کرتے ہیں






❤ کتنی خوبصورت ہو جاتی ہے زندگی ❤

جب دوست' محبت' اور ہمسفر ایک ہی انسان ہو





ہوا جو رابطہ تو اس کو بتاؤں گا🔥

تیرا نہ ملنا تیرے چھوڑ جانے سے بہتر ہے

💔




ھمیں پتا تھا #انجام اے #عشق کیا ھو گا 💔

بس #جوانی عروج پر تھی #زندگی برباد کر #بیٹھے💔





❤ کتنی خوبصورت ہو جاتی ہے زندگی ❤

جب دوست' محبت' اور ہمسفر ایک ہی انسان ہو



❣️ﮐﺎﺵ ﻣﺠﮭﮯ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﺗﯿﺮﯼ ﺳﻮﭺ ﮐﺎ ﻣﺤﻮﺭ

ﺗﻮ ﻣﯿﮟ ﺧﻮﺩ ﮐﻮ ﺗﺮﺍﺷﻮﮞ ___ﺗﯿﺮﮮ ﺍﻧﺪﺍﺯ ﻧﻈﺮ ﺳﮯ..🥀




‏ڈُھونڈ کر لاؤں کوئی تجھ سا کہاں سے آخر

‏ایک  ھی شخص  ھے بس تیرا بدل  یعنی تُو




دیکھ اے دل میری مٹی کہیں برباد نہ ہو

خاک ہــونا بھی تـــــو خاک درِ جاناں ہونا




نا جانے کتنی مدت سے دل میں یہ عمل ہے جاری

ذرا سی ٹھیس لگتی ہے، بہت سا ٹوٹ جاتا ہوں💬